Rashid Ali Parchaway

راشید صاحب کے لیے اطلاع ہے کہ آنے والے وقت میں اپ کمپیوٹر کے ماہرین میں شمار ہونگے انشاء اللہ

Jamal Abad Michni Parchaway.

Keywords

Affiliates


free forum

Forumotion on Facebook Forumotion on Twitter Forumotion on YouTube Forumotion on Google+


امت مسلمہ کے لیے ایک فتنہ....ریاض احمد گوہر شاہی

Share
avatar
Admin
Admin
Admin

Posts : 527
Join date : 09.10.2014

امت مسلمہ کے لیے ایک فتنہ....ریاض احمد گوہر شاہی

Post by Admin on Mon May 18, 2015 10:50 am

امت مسلمہ کو ہر زمانے میں ہی بے شمار فتنوں کا سامنا کرنا پڑا ہے کئی نبوت اور امام مہدی ہونے کے دعویدار اٹھے اور اپنی دنیاوآخرت بربار کرنے کے ساتھ ساتھ بے شمار لوگوں کو بھی گمراہ کرتے چلے گئے انہی فتنوں کا ایک سرغنہ ریاض احمد گوہر شاہی بھی ہے جس نے امام مہدی ہونے کے دعویٰ کے علاوہ عیسی سے ملاقات اورچاند ستاروں ،سورج ،حجراسود میں اپنی تصویر ہونے کادعویٰ بھی کیا آج ایک دفعہ بھی گوہرشاہی کے پیروکار عالمی انجمن سرفروشاں اسلام کے نام سے مسلمانوں کو گمراہ کرنے کیلئے بھرپور توانائیاں صرف کررہے ہیں عالمی روحانی تحریک انجمن سرفروشان اسلام نے کوٹری حیدرآباد کے بعد پنجاب کے بڑے شہروں فیصل آباد، راولپنڈی، لاہور، ملتان کو خصوصی ہدف بنا لیا ہے جبکہ کراچی میں بھی زور وشور سے خودساختہ عقائد کو پھیلانے میں سرگرم عمل ہیں مرکزی آستانہ المرکز روحانی انجمن سرفروشان اسلام کوٹری سے انجمن کے مراکز کیلئے بیگم گوہرشاہی کی جانب سے عطیات کی اپیل کے علاوہ ملک بھر میں لوگوں کو گمراہ کرنے کیلئے محافل نعت وذکر اللہ اور شب بیداروں کا اہتمام کیا جا رہا ہے اور انٹرنیٹ کے ذریعے بھی گوہر شاہی کے پیروکار ای میلز ،بلاگز کے زریعے خودساختہ عقائد پھیلانے میں مصروف ہیں حجراسود چاند پر اپنی تصویر کا دعویٰ کرنے والا گوہر شاہی خود تو مر چکا اور اس کے مرنے کے بعد اسکے پیروکار دوحصوں میں بٹ گئے ایک گروہ یونس الگوہر آف لندن گوہر شاہی کو امام مہدی ماننے لگا جبکہ دوسرا گروہ انجمن سرفروشان اسلام گوہرشاہی کی تصاویر کے حوالے سے مسلمانوں کو خوب گمراہ کرنے لگا اور مہدی فاونڈیشن یونس الگوہر کو گستاخوں کا ٹولہ کہنے لگا مہدی فاونڈیشن کی ترجمان ویٹ سائٹ گوہرشاہی ڈاٹ کام کو تبدیل کر کے انجمن سرفروشان اسلام کی طرف سے گوہرشاہی ڈاٹ نیٹ، او آر جی اور انجمن سرفروشان اسلام کے نام پرویب سائیٹ بنائی گئی اور گوہرشاہی جس کو علما نے مسیلمہ کذاب ثانی کا لقب دیا کے خودساختہ عقائد کیطرف دعوت دی جانے لگی اسی ویب سائیٹ کے زریعے حکومت پاکستان کی طرف سے گوہرشاہی کی کتاب دین الہی پر پابندی لگنے کے باوجود پھیلائی جا رہی ہے علاوہ ازیں حیدرآباد سے پندرہ روزہ صدائے فروش جبکہ میرپوخاص سے ماہنامہ فرض امت مسلمہ کو گمراہ کرنے کیلئے شائع کیے جا رہے ہیں انجمن سرفروشان اسلام کے مرکزی عالمی امیر وصی محمد قریشی جبکہ سرپرست اعلیٰ بیگم گوہرشاہی کی جانب سے المرکز روحانی کوٹری کی تعمیر وتوسیع کیلئے اور لنگر کو جاری رکھنے کے علاوہ ملک بھر میں مراکز روحانی کے قیام کیلئے عطیات کی اپیلیں بھی کی جا رہی ہیں انجمن سروفرشان اسلام کا خصوصی ہدف پنجاب ہے جہاں پنجاب کے آرگنائزر عبدالرزاق گوہر جبکہ فیصل آباد سے مشیر نشرواشاعت عبدالعزیز قادری ہیں انجمن کے تحت لوگوں کو گمراہ کرنے اور خودساختہ عقائد پھیلانے کیلئے محافل حمدو نعت اور شب بیداریوں کے علاوہ ملن پارٹیوں کا اہتمام کیا جاتا ہے جہاں 360 اولیاء کی تعظیم کے دورس کے علاوہ گوہرشاہی کی تصانیف دین الہی، مینارہ نور، روحانی سفر، تیاق قلب اور ترجمان جرائد کے علاوہ دیگر لٹریچر بھی دیا جاتا ہے ان اجتماعات میں آنے والے لوگوں کو عالمی مرکز کوٹری کا دورہ بھی کرایا جاتا ہے جسے روحانی دورے کا نام دیا گیا ہے پنجاب کے شہر لاہور میں پروگراموں کیلئے گردونواح کے شہروں قصور، رائیونڈ، شیخوپورہ، گجرات، پسرور سے لوگوں کو لایا جاتا ہے جبکہ ملتان میں پروگراموں کیلئے رحیم یارخان، خانیوال، بورے والا، ساہیوال، میاں چنوں، مظفرگڑھ، چشتیاں، پاکپتن اور راولپنڈی کے پروگراموں میں آزادکشمیر، واہ کینٹ، سرائے عالمگیر، جہلم جبکہ سمندری کے پروگراموں میں فیصل آباد، جھنگ، ٹوبہ، کمالیہ سرگودھا، جوہرآباد سے لوگوں کو لایا جاتا ہے اورخود ساختہ من گھڑت عقائد کی تبلیغ محافل حمدونعت کی آڑ میں کی جاتی ہے مانچسٹر میں مرنے والے گوہرشاہی کو کوٹری میں دفن کیا گیا جب کہ گوہرشاہی کے پیروکار گوہرشاہی کی موت کو تسلیم نہیں کرتے بلکہ اس بات پریقین رکھتے ہیں کہ گوہرشاہی جسم سمیت روپوش ہو گیا ہے اور وہ علاقہ جہاں گوہرشاہی کا گھر اور انجمن سرفروشان اسلام کا مرکزی آستانہ ہے اسے خدا کی بستی کا نام دیا گیا ہے گوہرشاہی اور اسکے بعض پروکاروں کو پاکستانی عدالتوں نے توہین رسالت صلی اللہ علیہ وسلم ﷺ کے مقدمات کے تحت سزائیں سنائیں تمام مکاتب فکر کے علماء نے بھی اس فتنے سے بچنے کیلئے ترغیب دی مگر اب یہ ہم مسلمانوں کی بے حسی ہے کہ ایک بارپھر جہاں توہین رسالت صلی اللہ علیہ وسلم ﷺ کے قانون کو ختم کروانے کی کوششیں کی جا رہی ہیں نبوت اور امامت کے جھوٹے دعویداروں کے پیروکار ہرجگہ متحرک ہو گئے ہیں اور لوگوں کو گمراہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ علمائے کرام اس فتنے سے امت کو آگاہ کر کے اپنا دینی فریضہ سرانجام دیں کیونکہ یہ بہت خطرناک فتنہ ہے تمام مکاتب فکر کے
علماءکرام گوہر شاہی کو اسلام سے خارج قرار دے چکے ہی











____________
راشد صاحب


    Current date/time is Wed Jun 20, 2018 10:00 pm